22

میرے کیس میں انصاف نہیں ہوا بلکہ مجھے۔۔۔۔۔۔ جہانگیر ترین کا اپنے نا اہلی کیس پر ایسا انکشاف کہ آپ بھی حیران رہ جائیں گے

اسلام آباد ( ویب ڈیسک ) تحریک انصاف کے مرکزی رہنما جہانگیر ترین کا کہنا ہے کہ ان کے نا اہلی کیس میں انصاف نہیں ہوا بلکہ انہیں بیلنس کیا گیا ہے۔ وزیر اعظم عمران خان کے قریبی ساتھی اور تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں

بات چیت کرتے ہوئے سپریم کورٹ کے فیصلے پر اعتراض اٹھایا ۔ انہوں نے کہا کہ نا اہلی کیس میں ان کے ساتھ انصاف نہیں کیا گیا بلکہ انہیں بیلنس کیا گیا ہے۔ خیال رہے کہ سپریم کورٹ نے دسمبر 2017 میں تحریک انصاف کے سیکرٹری جنرل جہانگیر ترین کو آئین کے آرٹیکل 62 ون ایف کے تحت نا اہل قرار دیا تھا ، اسی قانون کے تحت سابق وزیر اعظم نواز شریف کو بھی نا اہل قرار دیا گیا تھا ۔ نااہل ہونے کے باوجود حکومتی امور کی سرانجام دہی میں قانونی قباحت کے حوالے سے پوچھے گئے سوال پر جہانگیر ترین نے کہا کہ انہیں عمران خان کی جانب سے جہاں بھی کوئی ٹاسک دیا جاتا ہے وہ پیچھے رہ کر جہاں تک ہوسکتا ہے ٹیم کی مدد کرتے ہیں ۔ ’ میں ایسی کوئی چیز نہیں کرتا جس سے عمران خان پر کوئی انگلی اٹھائی جاسکے، قانونی طور پر میرے کام کرنے میں کوئی قانونی قباحت نہیں ہے، پارٹی کا سیاسی کارکن ہوں اور کام کرسکتا ہوں ، میں کسی کمیٹی کا ممبر بھی بن سکتا ہوں ، البتہ کوئی عہدہ نہیں رکھ سکتا، جب تک عمران خان کو ضرورت پڑے گی اس وقت تک ان کے ساتھ کھڑا رہوں گا‘۔ دوسری جانب جہانگیر ترین کا کہنا ہے کہ ضروری نہیں جس بندے کے پاس عہدہ ہو وہی جا سکتا ہے میں پارٹی کا ورکر ہوں اور پاکستانی شہری ہوں اور ملک و قوم کے لیے کچھ کرنا چاہتا ہوں لہٰذا میں وزیراعظم صاحب کو مشورہ دے سکتا ہوں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں