56

دور خلافت کی یاد تازہ ہو گئی ۔۔۔ وزیراعظم عمران خان کے انتہائی قریبی ساتھی بھیس بدل کر کہاں پہنچ گئے؟ ناقابل یقین انکشاف

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے بھیس بدل کر پمز اسپتال کے دورہ کے بعد کہا ہے کہ مریضوں کی باتیں سن کر انہیں دلی تکلیف ہوئی ، پمز اسپتال میں بہتری کے لیے کافی کام کرنے کی ضرورت ہے ، انتظامیہ و ڈاکٹرز

دستیاب وسائل میں ہر ممکن خیال رکھ رہے ہیں۔تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے پمز اسپتال کا دورہ کیا۔ معاون خصوصی نے بھیس بدل کر اسپتال کا دورہ کیا۔ بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ پمز اسپتال کے مختلف وارڈز کا دورہ کیا ہے، کافی شعبوں میں مریضوں سے علاج کی معلومات لی ہیں۔ مریضوں کی باتیں سن کر دلی تکلیف ہوئی۔ معاون خصوصی نے کہا کہ پمز اسپتال میں بہتری کے لیے کافی کام کرنے کی ضرورت ہے، انتظامیہ و ڈاکٹرز دستیاب وسائل میں ہر ممکن خیال رکھ رہے ہیں۔ پمز اسپتال کی او پی ڈی سروسز کی توسیع سمیت عملے کی کمی دور کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پمز اسپتال کی ایمرجنسی کے حالات متاثر کن نہیں ہیں، آنے والے کچھ ماہ میں پمز میں بہتری کی امید ہے۔ دوسری جانب وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے بھیس بدل کر پمز اسپتال کا دورہ کیا، ان کا کہنا ہے کہ مریضوں کی باتیں سن کر انہیں دلی تکلیف ہوئی۔ تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے پمز اسپتال کا دورہ کیا۔ معاون خصوصی نے بھیس بدل کر اسپتال کا دورہ کیا۔ بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ پمز اسپتال کے مختلف وارڈز کا دورہ کیا ہے، کافی شعبوں میں مریضوں سے علاج کی معلومات لی ہیں۔ مریضوں کی باتیں سن کر دلی تکلیف ہوئی۔ معاون خصوصی نے کہا

کہ پمز اسپتال میں بہتری کے لیے کافی کام کرنے کی ضرورت ہے، انتظامیہ و ڈاکٹرز دستیاب وسائل میں ہر ممکن خیال رکھ رہے ہیں۔ پمز اسپتال کی او پی ڈی سروسز کی توسیع سمیت عملے کی کمی دور کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پمز اسپتال کی ایمرجنسی کے حالات متاثر کن نہیں ہیں، آنے والے کچھ ماہ میں پمز میں بہتری کی امید ہے۔ خیال رہے کہ ڈاکٹر ظفر اللہ مرزا نے اپریل میں اپنی ذمہ داریاں سنبھالی تھیں۔ ترجمان وزارت قومی صحت کے مطابق ڈاکٹر ظفر اللہ کی تعیناتی صحت کے شعبے میں حکومت کے وژن اور اہداف کے حصول کے حوالے سے انتہائی اہمیت کی حامل ہے۔ عالمی صحت کے حلقوں نے بھی ان کی تعیناتی خوش آئند قرار دی تھی۔ دوسری جانب بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ پمز اسپتال کے مختلف وارڈز کا دورہ کیا ہے، کافی شعبوں میں مریضوں سے علاج کی معلومات لی ہیں۔ مریضوں کی باتیں سن کر دلی تکلیف ہوئی۔ معاون خصوصی نے کہا کہ پمز اسپتال میں بہتری کے لیے کافی کام کرنے کی ضرورت ہے، انتظامیہ و ڈاکٹرز دستیاب وسائل میں ہر ممکن خیال رکھ رہے ہیں۔ پمز اسپتال کی او پی ڈی سروسز کی توسیع سمیت عملے کی کمی دور کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پمز اسپتال کی ایمرجنسی کے حالات متاثر کن نہیں ہیں، آنے والے کچھ ماہ میں پمز میں بہتری کی امید ہے۔ خیال رہے کہ ڈاکٹر ظفر اللہ مرزا نے اپریل میں اپنی ذمہ داریاں سنبھالی تھیں۔ ترجمان وزارت قومی صحت کے مطابق ڈاکٹر ظفر اللہ کی تعیناتی صحت کے شعبے میں حکومت کے وژن اور اہداف کے حصول کے حوالے سے انتہائی اہمیت کی حامل ہے۔ عالمی صحت کے حلقوں نے بھی ان کی تعیناتی خوش آئند قرار دی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں