85

پاکستانی ماڈل فرح ناظم کو اغوا کر کے تشدد کا نشانہ بنوانے والا کوئی اور نہیں بلکہ۔۔۔۔۔اداکارہ و ماڈل کا اسکے ساتھ تعلق کیا تھا؟ تہلکہ خیز انکشاف

کراچی( ویب ڈیسک) ماڈل فرح ناظم کو گزشتہ دنوں کراچی کے علاقے نارتھ ناظم آباد میں تشدد کا نشانہ بنایا گیا تھا۔ اب انہوں نے اپنے اوپر ہونے والے ظلم کی داستان دنیا کو سنا دی ہے۔ فرح ناظم نے ایک ویڈیو جاری کی ہے جس میں اس کے چہرے پر تشدد کے نشانات

واضح دیکھے جا سکتے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق ماڈل فرح ناظم کو گزشتہ دنوں کراچی کے علاقے نارتھ ناظم آباد میں تشدد کا نشانہ بنایا گیا تھا۔ اب انہوں نے اپنے اوپر ہونے والے ظلم کی داستان دنیا کو سنا دی ہے۔ فرح ناظم نے ایک ویڈیو جاری کی ہے جس میں اس کے چہرے پر تشدد کے نشانات واضح دیکھے جا سکتے ہیں۔ ویڈیو میں اس نے بتایا ہے کہ ”میں 4مئی کی رات ٹیکسی میں گھر واپس جا رہی تھی کہ جان شیر خان نامی شخص نے مجھے اغواءکر لیا اور نارتھ ناظم آباد میں واقع اپنے گھر لیجا کر تشدد کا نشانہ بنایا۔ فرح ناظم نے بتایا کہ ”جان شیر خان سے میری6ماہ قبل دوستی ہوئی تھی اور وہ مجھے ماڈلنگ سے منع کرتا تھا لیکن جب میں نے اس کی بات نہیں مانی تو اس نے مجھے اغواءکرکے تشدد کا نشانہ بناڈالا۔ گھر میں اس کی ماں اور بہنیں بھی موجود تھیں اور انہوں نے بھی مجھے اس سے بچانے کی بجائے اس کے ساتھ مل کر مجھ پر تشدد کیا۔ تشدد کے بعد اس نے مجھے دھمکی دی کہ میں زبان بندرکھوں اور کہا کہ جلد یا بدیر وہ مجھے قتل کر دے گا۔ رپورٹ کے مطابق واقعے کا مقدمہ فرح ناظم کی مدعیت میں نارتھ ناظم آباد تھانے میں درج کر لیا گیا ہے ،پولیس کے مطابق ملزم نے عدالت سے ضمانت قبل از گرفتاری کرالی ہے ، جبکہ فرح نے مقدمہ تو درج کرایا لیکن عدالت نہیں پہنچی، اورابھی تک خاتون نے تفتیشی ٹیم سے بھی کوئی رابطہ بھی نہیں کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں