14

شہبازشریف غضب کی چال چل گئے: حکومت کی اتحادی جماعت ق لیگ کو اپنے ساتھ ملا لیا، ایک خبر نے حکومتی ایوانوں میں ہلچل مچا دی

لاہور(ویب ڈیسک) پنجاب میں اپوزیشن جماعتوں کے رابطوں میں بھی تیزی آ گئی،چوہددری برادران اور ن لیگیوں کا باہمی اتحاد دیکھنے میں آ رہا ہے،تفصیلات کے مطابق چوہدری شجاعت اور شہباز شریف ان دنوں لندن میں موجود ہیں اور شہباز شریف کی طوہدری شجاعت سے ملاقات بھی متوقع ہے شہباز شریف نےچوہدری

شجاعت کو پیغام دیا ہے کہ ماضی کی تلخیاں بھلا کر مزید آگے بڑھیں گے۔ساتھ ہی چوہدری نثار بھی سرگرم نظر آرہے ہیں وہ بھی ملاقات کے حامی ہیں دوسری جانب خبر یہ بھی ہے کہ مسلم لیگ (ن)کے ناراض رہنما سینئر سیاستدان چوہدری نثار علی خان کی جانب سے پنجاب اسمبلی کی رکنیت کا حلف اٹھانے کا امکان ہے ۔چوہدری نثار 25 جولائی 2018 کے عام انتخابات میں رکن پنجاب اسمبلی منتخب ہوئے تھے تاہم انہوں نے حلف نہیں اٹھایا تھا۔نجی ٹی وی کے مطابق اطلاعات ہیں کہ چوہدری نثار علی خان کل سے شروع ہونے والے اجلاس میں رکن پنجاب اسمبلی کا حلف اٹھائیں گے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ چوہدری نثار کا حلف اٹھانے کا فیصلہ بلاوجہ نہیں اور اگر وہ حلف اٹھاتے ہیں تو پھر کسی سطح پر ضرور تبدیلی آ سکتی ہے ۔میڈیا رپورٹس میں چوہدری نثار کی لندن میں موجود مسلم لیگ (ن) کے صدر محمد شہباز شریف سے ملاقات کا بھی امکان ظاہر کیا جارہا ہے ۔ یاد رہے کہ مسلم لیگ (ن)کی قیادت سے ناراض چوہدری نثار نے آزاد حیثیت سے قومی اسمبلی کی 2 اور صوبائی اسمبلی کی ایک نشست پر انتخاب لڑا تھا جس میں انہیں صرف پنجاب اسمبلی کی نشست پر کامیابی ملی تھی۔پاکستان مسلم لیگ (ن) کے منحرف رہنما اور سابق وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کی صدر مسلم لیگ (ن) شہباز شریف سے ملاقات متوقع ہے ،جس کے بعد وہ صوبائی اسمبلی کی نشست پر حلف اٹھائیں گے ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق چوہدری نثار نے (ن )لیگ میں مزاحمتی سیاست کا بیانیہ رد ہونے کے بعد رابطوں کا فیصلہ کیا اور اسی سلسلے میں ان کی شہبازشریف کے ساتھ لندن میں ملاقات متوقع ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں