37

بریکنگ نیوز: سائے کی طرح نوازشریف کے ساتھ رہنے والے سابق اسپیکر سردار ایاز صادق کا اچانک پی ٹی آئی کا ساتھ دینے کا اعلان ، ایک خبر نے پارلیمنٹ میں ہلچل مچا دی

لاہور (ویب ڈیسک) مسلم لیگ ن کی سینئررہنما اور سابق اسپیکر قومی اسمبلی نے پی ٹی آئی رہنما عبدالعلیم خان کی گرفتاری کی مذمت کر دی ہے ، کہتے ہیں کہ معاملے میں پی ٹی آئی کے ساتھ ہوں ، سیاستدانوں کی اس طرح گرفتاری نیک شگون نہیں ہے ،
مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما و سابق سپیکر قومی اسمبلی سردار ا یازصادق نے کہا ہے کہ حکومت کس این آر او کی بات کر رہی ہے کیا اس میں این آر او دینے کی ہمت ہے،انکوائری کے مرحلے میں عبد العلیم خان کی گرفتاری کاکوئی جواز نہ نہیں تھا ،نیب قوانین میں تبدیلی کیلئے عملی اقدامات اٹھائے جانے چاہئیں، اپنے حلقہ انتخاب میں ڈسپنسری کا افتتاح کرنے کے بعد گفتگو کرتے ہوئے ایاز صادق نے کہا کہ عمران خان نے الزام لگایا کہ شہباز شریف نے پانامہ کیس سے پیچھے ہٹنے کے لئے انہیں10ارب روپے رشوت کی پیشکش کی ہے لیکن جب ان کے الزام کا عدالت میں کیس لگتا ہے تو پیش نہیں ہوتے اور تاریخ پر تاریخ لی جاتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ چھ ماہ میں ایک قانون سازی نہیںہو سکی اور یہ حکومت کی نا اہلی ہے، انہوں نے علیم خان کی گرفتاری کے حوالے سے سوال کے جواب میں کہا کہ میر ا ذاتی خیال ہے کہ جب تک کیس انکوائری کے مرحلے میں اس وقت تک گرفتاری نہیں ہونی چاہیے اور میں اس کی مذمت کرتا ہوں ۔ چاہیے علیم خان ہو یا کوئی اگر اس پر کیس ثابت نہیں ہوتا تو اسے جونوے روز یا ایک سال قید میں رکھا گیا وہ سال کون واپس کرے گا ، اس اقدام کو روکا جانا چاہیے اور نیب قوانین میں تبدیلی کے لئے قومی اسمبلی میں عملی اقدامات اٹھائے جانے چاہئیں

[wpna_ad placement_id=”1934123506654111_1934123563320772″]

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں