سب سے بڑی بریکنگ نیوز۔۔۔!!! تما م چیزیں 15 سے 20 فیصد سستی، وزیر اعظم عمران خان نے شاندار اعلان کر دیا

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعظم عمران خان نے اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں پندرہ سے بیس فیصد کمی کرنےکا حکم جاری کیا ہے۔ نجی ٹی وی چینل کی رپورٹ کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے قانونی حدودسے زائد غذائی اجناس ذخیرہ کرنے والوں کے خلاف کریک ڈاون کا فیصلہ کرلیاہے جس کے بعداب قانونی

حد سے زیادہ اجناس ذخیرہ کرنے والوں کے خلاف بڑے پیمانے پر کارروائی کی جائے گی۔اس حوالے سے وزیراعظم نے کہا ہے کہ قیمتوں میں ردوبدل کر کے زائدپیسہ کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے ۔کسی بھی بڑےیا چھوٹے ذخیرہ اندوز کو نہیں چھوڑ اجائے گا۔غریب آدمی کے کھانے پینے کی کسی بھی چیز کا ذخیرہ نہیں ہونا چاہئے۔انہوں نے کہاغریب عوام کا مفاد ہر چیز سے بڑھ کر ہے۔وزیراعظم نے مزید کہا کہ وفاقی سکولوں میں اساتذہ کی کمی کو پورا کیاجائے ۔تعلیم سے متعلق معاملات کو ہنگامی بنیادوں پر حل کیاجائے۔دوسری جانب وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت پٹرول اور گیس کی قیمتوں سے متعلق اجلاس ہوا۔ اجلاس کے دوران معاون خصوصی پٹرولیم کی جانب سے وزیراعظم کو پٹرول، ڈیزل،گیس کی قیمتوں کے تعین کے طریقہ کارپربریفنگ دی گئی۔ وزیراعظم کو ماضی کے حکمرانوں کی جانب سے کیے گئے معاہدوں پر بھی بریفنگ دی گئی۔ معاون خصوصی کی جانب سے وزیراعظم کو پٹرول، ڈیزل، گیس کی قیمتوں میں استحکام،کمی لانے کی تجاویز پیش کی گئیں۔بریفنگ لینے کے بعد وزیراعظم نے کہا کہ پٹرول، ڈیزل،گیس کی قیمتوں میں کمی کیلئےجامع روڈ میپ جلد مرتب کریں۔عوام کو ریلیف فراہم کرنے کے ہر آپشن پر غور کیا جائے گا۔ ماضی کے حکمرانوں کےغیرمنطقی طور پر طویل المدت معاہدوں سے عوام پر بوجھ پڑا،تاہم ان تمام عوامل کے باوجود حکومت عوام کی مشکلات پر خاموش تماشائی نہیں رہ سکتی۔ ہر ممکن کوشش ہے بجلی گیس کی قیمتوں میں کم آمدن اور تنخواہ دار کو ریلیف دیں۔ حکومت کو احساس ہے کہ کم آمدنی والا اور تنخواہ دار طبقہ مشکلات کا شکار ہے۔ ہمارا بنیادی مقصد عوام کو ممکنہ حد تک ریلیف فراہم کرنا ہے۔ یہاں یہ بات واضح رہے کہ عالمی مارکیٹ میں گزشتہ چند ہفتوں کے دوران خام تیل کی قیمتوں میں تقریباً 30 فیصد تک کی کمی ہو چکی ہےاور اگر اس حساب سے پاکستان میں بھی پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا اندازہ لگایا جائے تو پاکستان میں پٹرول 27 روپے فی لیٹر تک سستا ہوسکتا ہے، جس کے بعد پٹرول کی قیمت 90 روپے فی لیٹر ہوسکتی ہے، جبکہ ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت میں 29 روپے فی لیٹر تک کمی کا امکان ہے، جس کے بعد ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت 98 روپے فی لیٹر ہوسکتی ہے۔

Comments are closed, but trackbacks and pingbacks are open.