’’ حکومت سے نکلایا توزیادہ خطرناک ہوجاؤں گا‘‘ وزیراعظم کی دھمکی کس کے لیے تھی؟ مختلف تجزیہ کاروں نے ساری کہانی بیان کر دی

" >

اسلا م آباد(نیوز ڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے خبردار کیا کہ میں ابھی حکومت میں ہوں اس لیے خاموش ہوں، اگرحکومت سے نکل گیا تو زیادہ خطرناک ہوجاؤں گا اور پھر آپ کو چھپنے کی جگہ نہیں ملے گی۔عوام کے سوالات کے جوابات دیتے ہوئے وزیراعظم کے اس بیان نے ملکی سیاست میں ہلچل مچادی

ہے,جہاں اپوزیشن کی جانب سے ردعمل سامنے آرہا ہے وہیں تجزیہ کار بھی اپنی رائے کا اظہار کررہے ہیں,سوال بھی پوچھ رہے ہیں کہ یہ وارننگ کس کے لئے تھی۔رضا احمد رومی نے لکھا کہ میں آپ لوگوں کیلئے زیادہ خطرناک ہوں گا عمران خان کا یہ پیغام کس کیلۓ تھا؟؟اینکر اور تجزیہ کار عمران خان نے بتایا کہ وزیراعظم کی یہ دھمکی سب کیلئے تھی, ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ عمران خان نے بہت سے لوگوںکو کام پر لگادیا, پھر چاہے حامی ہوں یا مخالف, انہوں نے کہا کہ میں نے پہلے ہی کہہ دیا تھا عمران خان کو نکالا گیا تو وہ زیادہ خطرناک ہوجائیں گے پھر کسی سے نہیں سنبھلیں گے۔مظہر عباس نے لکھا کہ وزیراعظم عمران خان کا شریف برادران کو دھماکے دار بیان,انہوں نے نواز شریف کو واپس آنے کا چیلنج، شہباز شریف کو قائد حزب اختلاف تسلیم کرنے سے انکار کردیا,وہ اپنی تقریباً دو گھنٹے کی ٹی وی گفتگو کے دوران کافی پر اعتماد نظر آئے,انہوں نے ایک بار پھر اقتدار میں آنے کی پیشگوئی کردی۔عاصمہ شیرازی نے میڈیا پر تنقید کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ‏یعنی ہر چیز کا ذمہ دار میڈیا۔۔۔ظالم میڈیا مہنگائی بھی کم نہیں کرنے دیتا نہ ہی مافیاز کے خلاف کھڑا ہوتا ہے۔مشرف زیدی نے لکھا کہ لوگوں میں انتشاری کیفیت پیدا کرکے کرسی پر سوار رہنا؟ کیا یہ ہے، ان کی سوچ میں انصاف پھیلانا؟ یہ کس طرح کی گفتگو ہے ؟ یہ کیا پاکستانی عوام کو دھمکی دے رہے ہیں، یا ان کو جنہوں نے ان کا چناؤ کیا تھا؟

افسوس۔اینکر طارق متین نے کہا کہ اختتام تند و تیز۔ میں حکومت سے باہر نکل کے زیادہ خطرناک ۔ یہ مدت ہماری اور اگلی مدت بھی ہماری جماعت کی ہے۔سینئر تجزیہ کار حبیب اکرم نے کہا ہے کہ درحقیقت عمران خان کا اشارہ پس پردہ ڈیل کرکے انہیں اقتدار سے ہٹانے کے منصوبے میں شریک تمام فریقین کی جانب ہے۔اگر کوئی یہ سمجھتا ہے کہ عمران خان کو کمزور کیا جاسکتا ہے یا ڈرایا جاسکتا ہے یہ ذرا مشکل بات ہے۔اپوزیشن کی جانب سے تنقید کرنےپر بھی جوابی ٹوئٹس کا سلسلہ جاری ہے, فیاض راجا نے ن لیگ کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے لکھا کہ ‏وہ صرف گھٹیا ہی نہیں، قابل ترس بھی ہیں,بے چاروں کے پاس عمران خان کے بیان کو “بھنبھوڑنے” کے علاوہ کوئی خبر نہیں,بنتے ہیں انقلابی مگر ہیں اتنے جعلی کہ روز پہلے منتیں پھر دعائیں کرتے ہیں کہ خان اور اسٹیبلشمنٹ میں لڑائی ہوجائے,ساڑھے تین سال ہوگئے ان کی دال نہیں گلی کپتان کے آگےارم زعیم نے لکھا کہ ‏مزاحمت کے طعنے تو دیکھو کون ما رہا , جن کا خود کا مالک ہر بار 8000 میل دور بھاگ جاتا ہے۔اور مزاحمت ٹھنڈی کر کے یس باس کا نعرہ لگا کر واپس ا جاتا۔نے لکھا کہ آپ کی دھمکیاں کہ اقتدار سے نکالا گیا تو مزید خطرناک ہو جاؤں گا گیدڑ بھبکیوں کے سوا کچھ نہیں۔انہوں نے کہا کہ جس دن آپ اقتدار سے نکلے عوام شکرانے کے نفل پڑھیں گے۔ نا آپ نواز شریف ہیں جس کے پیچھے عوام کھڑی تھی نا ہی آپ بیچارے اور مظلوم ہیں۔ آپ سازشی ہیں اور مکافات عمل کا شکار ہوئے ہیں۔

52

اپنا تبصرہ بھیجیں